ایسے ہے رواں میراقلم نعتِ نبی میں

logomaqbooliya

غلام ربانی فدا
مدیرجہان نعت ہیرور


ایسے ہے رواں میراقلم نعتِ نبی میں
خوشبو ہے بسی جیسے کہ ہر گل میں کلی میں
انگلی کے اشارے سے قمر ہوتا ہے ٹکڑے
سورج بھی تو ذرّہ ہے مدینے کی گلی میں
اے شاعرو !جو اس کو سنے کیف ہو طاری
اتناتو اثر پیداکرونعتِ نبی میں
نکہت ہے پسینے میںمحمد کے جو یارو
لاریب نہیںایسی کسی گل میں کلی میں
گر خوبیٔ قسمت سے  فداؔ طیبہ کوجائیں
کھل جائیں کئی پھول تمنائے دلی میں