حمد سعید رحمانی

logomaqbooliya

سانسوں میں حمد تیری تحلیل کررہا ہوں
تیرے کلام کی میں ترتیل کررہا ہوں
کرکے خطا سے توبہ اے ربِ دوجہاں میں
خود کو نئے سرے سے تشکیل کررہا ہوں
دل میں چراغ تیری یادوں کا میں جلاکر
پرنور اپنا قصرتخئیل کررہا ہوں
ہے شخصیت ادھوری اب تک مرے خدایا
قرآن پڑھ کے اس کی تکمیل کررہا ہوں
نیکی کے راستے پر چل کر ہمیشہ میں بھی
تیری ہدایتوں کی تعمیل کررہا ہوں
تیری ثنا سے اپنے لفظوں کو میں سجاکر
جذبِ دروں کی اپنی ترسیل کررہا ہوں
تیرے حضور اپنا دستِ طلب بڑھا کر
پُر اپنی آرزو کی زنبیل کررہا ہوں
محبوب تر ہے اس کو بندے کی خاکساری
خود کو سعیدؔ اس کی تمثیل کررہا ہوں

سعید رحمانی

ایڈیٹر۔ادبی محاذکٹک اڑیسہ)