چند ضروری معلومات

logomaqbooliya

  وہ خوش نصیب جس نے ایمان کی حالت میں سرکارصلی اللہ تعالی علیہ والہ وسلم سے ملاقات کا شرف حاصل کیاہواور ایمان ہی پر اس کا انتقال ہواہو۔ (نزہۃ النظرفی توضیح نخبۃ الفکر)
تعداد صحابہ:
  صحابہ کرام علیہم الرضوان کی تعداد کے بارے میں قطعی طور پر توکوئی فیصلہ نہیں کیاجاسکتا لیکن محتاط اندازے کے مطابق ان کی تعداد ایک لاکھ سے متجاوز ہے۔
افضل ترین صحابہ کرام:
  اہل سنت کے نزدیک بالاتفاق افضل ترین صحابہ سیدنا صدیق اکبر پھر فاروق اعظم پھر عثمان غنی اور پھر علی المرتضی رضوان اللہ تعالی علیہم اجمعین ہیں۔ ان کے بعد دیگر عشرہ مبشرہ ،پھراصحاب بدرواحداورپھر اہل بیعت رضوان۔
مکثرین صحابہ:
  وہ صحابہ کرام جن سے کثیر تعداد میں احادیث مروی ہیں ان کو مکثرین صحابہ کہاجاتاہے یہ وہ حضرات ہیں جن کی مرویات کی تعداد دوہزار سے زائد ہے ان کے اسماء گرامی درج ذیل ہیں۔
(1)۔۔۔۔۔۔حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ:
۵۳۷۴ ا حادیث
(2)۔۔۔۔۔۔حضرت عبد اللہ بن عمررضی اللہ تعالی عنہما
۲۶۳۰ ا حادیث
(3)۔۔۔۔۔۔حضرت جابر بن عبد اللہ رضی اللہ تعالی عنہ
۲۵۴۰ احادیث
(4)۔۔۔۔۔۔حضرت انس بن مالک رضی اللہ تعالی عنہ
۲۲۸۶ احادیث
(5)۔۔۔۔۔۔حضرت ام المؤمنین عائشہ صدیقہ رضی اللہ تعالی عنہا
۲۲۱۰ احادیث
(6)۔۔۔۔۔۔حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ تعالی عنہ
۲۱۷۰ احادیث
  ان کے علاوہ اور کسی صحابی کی احادیث کی تعداد دوہزار سے زائد نہیں۔
تابِعی:
  وہ شخص جس نے کسی صحابی سے ملاقات کی ہواور اسلا م پر اس کاوصال ہواہو۔
افضل ترین تابِعی:
(۱)۔۔۔۔۔۔اہل مدینہ میں حضرت سعید بن مسیب۔ (۲)۔۔۔۔۔۔اہل کوفہ میں حضرت اویس قرنی ۔(۳)اہل بصرہ میں حضرت حسن بصری۔رضی اللہ تعالی عنہم اجمعین۔
صِحَاحِ سِتَّہ:
حدیث کی چھ مستند ترین کتابیں:
(۱)۔۔۔۔۔۔بخاری شریف(۲)۔۔۔۔۔۔مسلم شریف(۳)۔۔۔۔۔۔ترمذی شریف
(۴)۔۔۔۔۔۔ابوداؤد شریف(۵)۔۔۔۔۔۔نسائی شریف(۶)۔۔۔۔۔۔ابن ماجہ شریف۔