ذَوقِ نَعت ۱۳۲۶ھ برادرِ اعلیٰ حضرت شہنشاہِ سخن مولانا حسن رضا خان

سر صبح سعادت نے گریباں سے نکالا

سر صبح سعادت نے گریباں سے نکالا ظلمت کو ملا عالم اِمکاں سے نکالا پیدائشِ محبوب کی شادی میں خدا نے مدت کے گرفتاروں کو زِنداں سے نکالا رحمت کا خزانہ پئے تقسیمِ گدایاں اللّٰہ نے تہ خانۂ پنہاں سے… Read More

یہ اِکرام ہے مصطفیٰ پر خدا کا

یہ اِکرام ہے مصطفیٰ پر خدا کا کہ سب کچھ خدا کا ہوا مصطفیٰ کا یہ بیٹھا ہے سکہ تمہاری عطا کا کبھی ہاتھ اُٹھنے نہ پایا گدا کا چمکتا ہوا چاند غارِ حرا کا اُجالا ہوا برجِ عرشِ خدا… Read More

تمہارا نام مصیبت میں جب لیا ہوگا

تمہارا نام مصیبت میں جب لیا ہوگا ہمارا بگڑا ہوا کام بن گیا ہوگا گناہگار پہ جب لطف آپ کا ہوگا کیا بغیر کیا بے کیا کیا ہوگا خدا کا لطف ہوا ہوگا دست گیر ضرور جو گرتے گرتے ترا… Read More

ایسا تجھے خالق نے طرح دار بنایا

ایسا تجھے خالق نے طرح دار بنایا یوسف کو ترا طالب دیدار بنایا طلعت سے زمانہ کو پراَنوار بنایا نکہت سے گلی کوچوں کو گلزار بنایا دیواروں کو آئینہ بناتے ہیں وہ جلوے آئینوں کو جن جلوؤں نے دیوار بنایا… Read More

قبلہ کا بھی کعبہ رُخِ نیکو نظر آیا

قبلہ کا بھی کعبہ رُخِ نیکو نظر آیا کعبہ کا بھی قبلہ خمِ اَبرو نظر آیا محشر میں کسی نے بھی مری بات نہ پوچھی حامی نظر آیا تو بس اِک تو نظر آیا پھر بند کشاکش میں گرفتار نہ… Read More

مجرمِ ہیبت زَدہ جب فردِ عصیاں لے چلا

مجرمِ ہیبت زَدہ جب فردِ عصیاں لے چلا لطف شہ تسکین دیتا پیش یزداں لے چلا دل کے آئینہ میں جو تصویر جاناں لے چلا محفل جنت کی آرائش کا ساماں لے چلا رَہروِ جنت کو طیبہ کا بیاباں لے… Read More

تصور لطف دیتا ہے دہانِ پاک سروَر کا

تصور لطف دیتا ہے دہانِ پاک سروَر کا بھرا آتا ہے پانی میرے مونہہ میں حوضِ کوثر کا جو کچھ بھی وَصف ہو اُن کے جمالِ ذَرَّہ پروَر کا مِرے دیوان کا مَطلع ہو مَطلع مہرِ محشر کا مجھے بھی… Read More

کہوں کیاحال زاہد گلشنِ طیبہ کی نزہت کا

کہوں کیاحال زاہد گلشنِ طیبہ کی نزہت کا کہ ہے خلد بریں چھوٹا سا ٹکڑا میری جنت کا تَعَالَی اللّٰہ شوکت تیرے نام پاک کی آقا کہ اب تک عرشِ اعلیٰ کوہے سکتہ تیری ہیبت کا وکیل اپنا کیا ہے… Read More

دل مرا دنیا پہ شیدا ہوگیا

دل مرا دنیا پہ شیدا ہوگیا اے مرے اللّٰہ یہ کیا ہو گیا کچھ مرے بچنے کی صورت کیجئے اب تو جو ہونا تھا مولیٰ ہوگیا عیب پوشِ خلق دامن سے تِرے سب گنہگاروں کا پردہ ہوگیا رکھ دیا جب… Read More

عاصیوں کو در تمہارا مل گیا

عاصیوں کو در تمہارا مل گیا بے ٹھکانوں کو ٹھکانہ مل گیا فضلِ رب سے پھر کمی کس بات کی مل گیا سب کچھ جو طیبہ مل گیا کشفِ رازِ مَن رَّاٰنی یوں ہوا تم ملے تو حق تعالیٰ مل… Read More