سامانِ بخشش Mufti Azam Hind Muhammad Mustafa Raza مفتی اعظم ھند محمد مصطفیٰ رضا

رُباعیات کفشِ پا اُن کی رکھوں سر پہ تو پاؤں عزت

رُباعیات کفشِ پا اُن کی رکھوں سر پہ تو پاؤں عزت خاکِ پا اُن کی مَلوں منہ پہ تو پاؤں طَلعَت طیبہ کی ٹھنڈی ہوا آئے تو پاؤں فرحت قلبِ بے چین کو چین آئے تو جاں کو راحت منظورِ… Read More

دِلوں کو یہی زندگی بخشتا ہے ترا دردِ اُلفت ہی دل کی دَوا ہے

دِلوں کو یہی زندگی بخشتا ہے ترا دردِ اُلفت ہی دل کی دَوا ہے گلستانِ دنیا کا کیا ذِکر آقا کہ طوطی ترا سدرہ پر بولتا ہے مریضِ مَعاصی کو لے چل مَدینہ مَدینہ ہی عصیاں کا دارُالشفا ہے جو… Read More

حقیقت آپ کی حق جانتا ہے وہ وہم و فہم سے آقا وَرا ہے

حقیقت آپ کی حق جانتا ہے وہ وہم و فہم سے آقا وَرا ہے کچھ ایسا آپ کو حق نے کیا ہے کہ خود وہ آپ کا طالب ہوا ہے بلند اتنا تجھے حق نے کیا ہے کہ عرشِ حق… Read More

مئے محبوب سے سرشار کردے اُویسِ قرَنی کو جیسا کیا ہے

مئے محبوب سے سرشار کردے اُویسِ قرَنی کو جیسا کیا ہے گما دے اپنی اُلفت میں کچھ ایسا نہ پاؤں میں میں میں جو بے بقا ہے پلادے مَے کہ غفلت دُور کردے مجھے دنیا نے غافل کردیا ہے عطا… Read More

بخطِّ نور اس دَر پر لکھا ہے یہ بابِ رحمتِ رَبِّ عُلا ہے

بخطِّ نور اس دَر پر لکھا ہے یہ بابِ رحمتِ رَبِّ عُلا ہے سرِ خیرہ جو اب دَر پر جھکا ہے ادا ہے عمر بھر کی جو قضا ہے مقابل دَر کے یوں کعبہ بنا ہے یہ قبلہ ہے تو… Read More

تیری آمد ہے موت آئی ہے جانِ عیسیٰ تیری دُہائی ہے

تیری آمد ہے موت آئی ہے جانِ عیسیٰ تیری دُہائی ہے کیوں وطن اپنا چھوڑ آئی ہے کیوں سفر کی بلا اُٹھائی ہے(1) سیکڑوں آفتوں میں پھنسنے کو کیوں بدن میں یہ جان آئی ہے اُن کے جلوے ہیں میری… Read More

نگاہِ مہر جو اس مہر کی اِدھر ہوجائے گنہ کے داغ مٹیں دِل مرا قمر ہوجائے

نگاہِ مہر جو اس مہر کی اِدھر ہوجائے گنہ کے داغ مٹیں دِل مرا قمر ہوجائے جو قلب تیرہ پہ تیری کبھی نظر ہوجائے تو ایک نور کا بقعہ وہ سر بسر ہوجائے ہماری کشتِ اَمَل میں کبھی تو پھل… Read More

پیام لے کے جو آئی صبا مَدینے سے مریضِ عشق کی لائی دوا مَدینے سے

پیام لے کے جو آئی صبا مَدینے سے مریضِ عشق کی لائی دوا مَدینے سے سنو تو غور سے آئی صدا مَدینے سے قریں ہے رحمت و فضلِ خدا مَدینے سے ملے ہمارے بھی دِل کو جلا مَدینے سے کہ… Read More

کون کہتا ہے آنکھیں چرا کر چلے کب کسی سے نگاہیں بچا کر چلے

کون کہتا ہے آنکھیں چرا کر چلے کب کسی سے نگاہیں بچا کر چلے کون اُن سے نگاہیں لڑا کر چلے کس کی طاقت جو آنکھیں مِلا کر چلے وہ حسیں کیا جو فتنے اُٹھا کر چلے ہاں حسیں تم… Read More

مَرَضِ عشق کا بیمار بھی کیا ہوتا ہے جتنی کرتا ہے دوا دَرد سوا ہوتا ہے

مَرَضِ عشق کا بیمار بھی کیا ہوتا ہے جتنی کرتا ہے دوا دَرد سوا ہوتا ہے کیوں عبث خوف سے دل اپنا ہوا ہوتا ہے جب کرم آپ کا عاصی پہ شہا ہوتا ہے جس کا حامی وہ شہِ ہر… Read More