Naatiya Shayeri

اندھیری رات ہے غم کی گھٹا عصیاں کی کالی ہے

اندھیری رات ہے غم کی گھٹا عصیاں     کی کالی ہےدلِ بے کس کا اِس آفت میں     آقا تُو ہی والی ہےنہ ہو مایوس آتی ہے صَدا گورِ غریبَاں     سےنبی اُمّت کا حامی ہے خدا بندوں     کا… Read More

اُٹھا دو پردہ دِکھا دو چہرہ کہ نورِباری حجاب میں ہے

اُٹھا دو پردہ دِکھا دو چہرہ کہ نُورِ باری حجاب میں     ہےزمانہ تاریک ہورہا ہے کہ مہر کب سے نقاب میں     ہےنہیں     وہ میٹھی نگاہ والا خدا کی رحمت ہے جلوہ فرماغضب سے اُن کے خدا بچائے… Read More

عرش کی عقل دنگ ہے چرخ میں آسمان ہے

عرش کی عقل دنگ ہے چرخ میں     آسمان ہےجانِ مُراد اب کدھر ہائے تِرا مکان ہےبزمِ ثنائے زُلف میں     میری عروسِ فکر کوساری بہارِ ہشت خلد چھوٹا سا عِطر دان ہےعرش پہ جا کے مرغِ عقل تھک کے… Read More

مژدہ باد اے عاصیو! شافِع شہِ اَبرار ہے

مژدہ باد اے عاصیو! شافِع شہِ اَبرار ہےتَہْنِیت اے مجرمو! ذاتِ خدا غَفَّار ہےعرش سا فرشِ زمیں     ہے فرشِ پا عرشِ بریں    کیا نرالی طرز کی نامِ خُدا رَفتار ہےچاند شق ہو پَیڑ بولیں     جانور سجدے کریں    بَارَ … Read More

سَرور کہوں کہ مالک و مَولیٰ کہوں تجھے

سرور کہوں     کہ مالک و مَولیٰ کہوں     تجھےباغِ خلیل کا گلِ زَیبا کہوں     تجھےحرماں     نصیب ہوں     تجھے امید گہ کہوں    جانِ مراد و کانِ تَمَنّا کہوں     تجھےگلزارِ قدس کا گلِ رنگیں     اَدا کہوں … Read More

کِس کے جلوہ کی جھلک ہے یہ اُجالا کیا ہے

کِس کے جلوہ کی جھلک ہے یہ اُجالا کیا ہےہر طرف دِیدئہ حیرت زَدہ تکتا کیا ہےمانگ من مانتی مُنھ مانگی مُرادیں     لے گانہ یہاں     ’’نا‘‘ ہے نہ منگتا سے یہ کہنا ’’کیا ہے‘‘پند کڑوی لگے ناصِح سے… Read More

راہ پُرخار ہے کیا ہونا ہے

راہ پُرخار ہے کیا ہونا ہےپاؤں     افگار ہے کیا ہونا ہےخشک ہے خون کہ دشمن ظالِمسخت خونخوار ہے کیا ہونا ہےہم کو بِد کر وہی کرنا جس سےدوست بیزار ہے کیا ہونا ہےتن کی اب کون خبر لے ہے… Read More

کیا مہکتے ہیں مہکنے والے

کیا مہکتے ہیں     مہکنے والےبو پہ چلتے ہیں     بھٹکنے والےجگمگا اُٹھی مِری گور کی خاکتیرے قربان چمکنے والےمہِ بے داغ کے صَدقے جاؤں    یُوں     دمکتے ہیں     دمکنے والےعرش تک پھیلی ہے تابِ عارِضکیا جھلکتے ہیں   … Read More

آنکھیں رو رو کے سُجانے والے

آنکھیں     رو رو کے سُجانے والےجانے والے نہیں     آنے والےکوئی دن میں     یہ سرا اوجڑ ہےارے او چھاؤنی چھانے والےذبح ہوتے ہیں     وطن سے بچھڑےدیس کیوں     گاتے ہیں     گانے والےارے بد فَال بُری ہوتی… Read More

چمک تجھ سے پاتے ہیں سب پانے والے

چمک تجھ سے پاتے ہیں     سب پانے والےمِرا دِل بھی چمکا دے چمکانے والےبرستا نہیں     دیکھ کر اَبرِ رَحمتبدوں     پر بھی برسا دے برسانے والےمَدینہ کے خطے خدا تجھ کو رکھےغریبوں     فقیروں     کے ٹھہرانے والےتُو … Read More