تاریخ طبع وتالیف رسالہ نگارستان

تاریخ طبع وتالیف رسالہ نگارستان
لَطافت مصنفۂ خود
ہوگیا ختم یہ رسالہ آج
شکر خالق کریں نہ کیونکر ہم
سنِ تالیف اے حسنؔ سن لے
مَنبعِ وَصف شہر یارِ حرم
۲ ۰ ۱۳ ھ

دیگر
یہ چند وَرق نعت کے لایا ہے غلام آج
اِنعام کچھ اس کا مجھے اے بحرِ سخا دو
میں کیا کہوں میری ہے یہ حسرت یہ تمنا
میں کیا کہوں مجھ کو یہ صلا دو یہ صلا دو
تم آپ مرے دل کی مرادوں سے ہو واقف
خیرات کچھ اپنی مجھے اے بحرِ عطا دو
ہیں یہ سن تالیف فقیرانہ صدا میں
والی میں تصدق مجھے مِدحت کی جزا دو
۲ ۰ ۱۳ھ

One thought on “تاریخ طبع وتالیف رسالہ نگارستان

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *