طلباء کو مندرجہ ذیل اصطلاح یاد رکھنا بہترہے

طلباء کو مندرجہ ذیل اصطلاح یاد رکھنا بہترہے

قسم حدیث : تعریف
صحیح :۔وہ حدیث ہے جس کی سند راوی سے لے کر نبی کریم صلی اللہ علیہ آلہ وسلم تک متصل ہو، کوئی راوی چھوٹا نہ ہو، اور اس کے سب راوی سچے اور یاد کے پکے ہوں ، اور روایت کا خلاف اور پوشیدہ اسباب طعن نہ رکھتے ہوں ۔
حسن :۔  وہ حدیث ہے جس کے راویوں میں سے کسی پر جھوٹ کی تہمت نہ ہوئی ہے ، نہ رواہت کا خلاف ہو ، اور وہی حدیث دوسری طرح سے مروی ہو، اس کا رتبہ صحیح کے رتبہ سے کم ہے ۔
مرفوع :۔  وہ ہے جو نبی کریم صلی اللہ علیہ آلہ وسلم کا خاص فعل یاقول یا تقریرہو ، یعنی نبی کریم صلی اللہ علیہ آلہ وسلم نے اس کو مقرر کر رکھا ہو۔
متصل : ۔  وہ ہے جس کی سند برابر ملی ہو کوئی راوی چھوٹا نہ ہو۔
مسند :۔  وہ حدیث ہے جس کے راویوں کے نام مذکور ہوں ۔
مشہور:۔  وہ حدیث ہے کہ ہر زمانہ میں بہت راویوں نے اس کو روایت کیا ہو ۔
ضعیف :۔  وہ حدیث ہے جس کے راویوں میںسے کوئی راوی چھوٹا یا فاسق یا کسی طرح سے مطعون ہو۔
موقوف :۔  وہ قول اور فعل ہے جس کسی صحابی سے روایت کیاجائے۔
مرسل :۔  وہ حدیث ہے جو تابعی نبی کریم صلی اللہ علیہ آلہ وسلم سے روایت کرے کہ آپ نے ایسا کیا یا ایسا فرمایا یعنی ذکر صحابی کا نہ کرے۔
منقطع :۔ وہ حدیث جس کے اسناد برابر نہ ہوں ، شروع میں سے یا بیچ میں سے یا اوپر سے کوئی راوی چھوٹ گیا ہو
، مگر اکثر اس روایت پر بولتے ہیں جو تبع تابعی سے روایت کرے اور تابعی کا ذکر نہ کرے۔
معضل :۔  وہ حدیث ہے جس کے سند میں دو یا زیادہ راوی چھوٹے ہوں ۔
مضطرب :۔  وہ حدیث ہے جس میں روایت مختلف ہو کوئی کسی طرح روایت کرے کوئی دوسری طرح ۔
غریب :۔  وہ حدیث صحیح ہے جس کی روایت میں کسی جگہ ایک راوی اکیلا ہو ، اگر ہر زمانہ میں اکیلا ہوگا توفرد کہتے ہیں ، اگر ہر جگہ دو راوی ہوں تو اس کو عزیز کہتے ہیں ۔
متواتر :۔  وہ حدیث ہے کہ اس کے راوی کثرت سے ہوں کہ ان کا اتفاق جھوٹ پر عادتاً محال ہو۔
منکر:۔  اس حدیث کو کہتے ہیں جو کوئی ثقہ یعنی یاد کا پکا اور معتبر شخص لوگوں کی روایت کے خلاف بیان کرے ، اسی کو شاذ بھی کہتے ہیں ۔
معلق :۔  اس حدیث کو کہتے ہیں جس کے اسناد کے شروع میں سے ایک یازیادہ راوی چھوٹ جائیں اور اس فعل کو تالیق کہتے ہیں ۔
مدلس :۔  تدلیس حدیث اس فعل کو کہتے ہیں کہ راوی جس شخص سے روایت کرے
اس سے ملاقات کی ہو یا وہ اس کا ہم عصر ہو، مگر اس سے اس روایت کو سنا نہ ہو، اور ایسے الفاظ میں بیان کرے جس سے یہ وہم ہوتا ہو کہ سنا ہوا کہتا ہے ، یا تدلیس اس کو کہتے ہیں کہ راوی اپنے استاذ کا نام چھپائے اور دوسرے شخص کا نام بولے۔
معلل :۔  وہ حدیث ہے کہ ظاہر میں تو عیب سے پاک معلوم ہوتا ہومگر باطن میں سب سے طعن پایا جاتے ہوں ۔
مدرج :۔  اس کو کہتے ہیں کہ حدیث میں کسی راوی کا کلام درج ہوجائے اور یہ گمان ہو کہ یہ کلام
بھی حدیث ہے یا دو متنوں کو کہ دو سندوں سے مروی ہو ، ان کو ایک سند سے روایت کیاجائے ۔
مودوع :۔  وہ حدیث ہے جو کسی نے خود بناکر نبی کریم صلی اللہ علیہ آلہ وسلم کی طرف یا صحابہ کی طرف منسوب کر دی ہو۔
تمام ہوئے اقسام حدیث ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!