Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

کعبہ کوبَيت الْعَتِيق کہنے کی وجہ:

(14)۔۔۔۔۔۔خاتَمُ الْمُرْسَلین، رَحْمَۃٌ لّلْعٰلَمین صلَّی  اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلَّم کا فرمانِ عالیشان ہے :”کعبہ کو بَيت الْعَتِيق اس لئے کہا جاتا ہے کیونکہ اللہ عزوجل نے اسے ظالم و جابر لوگوں سے آزاد فرما ديا ہے، اسی لئے اس پر کبھی کوئی ظالم قابض نہيں ہوا۔”
( شعب الایمان ، باب فی المناسک ، حدیث الکعبۃ والمسجد الحرام ، الحدیث: ۴۰۱۰ ، ج۳ ، ص ۴۴۳)
error: Content is protected !!