Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

حج کی سنتیں اور آداب

وسعت اور فراخی کے ساتھ خرچ کرنا حتی کہ اپنی سواری پر بھی خرچ کرنا ثواب ہے کیوں کہ حج میں خرچ کرنا ثواب کے اعتبار سے جہاد میں خرچ کے برابر ہے، ہمیشہ طہارت کے ساتھ رہنا، زبان کو فحش اور بے ہودہ باتوں سے روکنا، آٹھویں تاریخ کو طلوع شمس کے بعد مکہ سے منیٰ کے لیے روانہ ہونا تاکہ پانچوں نمازیں (ظہر، عصر مغرب، عشاء، فجر) منیٰ میں ہو جائیں، منیٰ میں رات گزرنا، پھر منیٰ سے عرفات کے لیے نویں تاریخ کو طلوع شمس کے بعد نکلنا، عرفات سے غروب آفتاب کے بعد سکون و وقار کے ساتھ نکلنا، دسویں رات مزدلفہ میں گزارنا، ایام منیٰ کی راتیں منیٰ میں گزارنا، دسویں تاریخ کو رمی طلوع شمس اور زوال کے درمیان اور باقی ایام میں رمی زوال کے بعد سے غروب تک ہونا، اگر بارہ تاریخ کو منیٰ سے جانا چاہتا ہے تو غروب آفتاب سے قبل نکل جانا، منیٰ سے مکہ کو روانگی کے وقت محصب میں قیام کرنا اگرچہ ایک ہی ساعت کے لیے ہو، آب زمزم کا قبلہ رُخ کھڑے ہو کر پینا، ملتزم سے لپٹنا، زمزم کو سر اور بدن پر ڈالنا، ہر مقام پر تضرع و بکاء کی کوشش کرنا، طواف قدوم قارن اور مفرد کے لیے ہے، رمل اور اضطباع کرنا۔
error: Content is protected !!