بنی اسرائیل کے نوجوان کی توبہ

بنی اسرائیل کے نوجوان کی توبہ

بنی اسرائيل ميں ايک جوان تھا جس نے بيس سال تک اللہ عزوجل کی عبادت کی ، پھر بيس سال تک نافرمانی کی ۔پھر آئينہ ديکھاتو داڑھی ميں بال سفيد تھے ۔وہ غم زدہ ہوگیا اورکہنے لگا:”اے ميرے خدا!ميں نے بيس سال تک تيری عبادت کی اور بيس سال تک تيری نافرمانی کی اگر ميں تيری طرف آؤں تو کيا ميری توبہ قبول ہو گی ؟”اس نے کسی کہنے والے کی آواز سنی :”تم نے ہم سے محبت کی ہم نے تم سے محبت کی ،پھر تو نے ہميں چھوڑ ديا اور ہم نے بھی تجھے چھوڑ ديا تو نے ہماری نافرمانی کی اور ہم نے تجھے مہلت دی اور اگر تُو توبہ کر کے ہماری طرف آئے گا تو ہم تيری توبہ قبول کريں گے۔” (مکاشفۃ القلوب ، الباب السابع عشر فی بیان الامانۃ والتو بۃ ، ص ۶۲)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!