Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

سترِ عورت سے کیا مراد ہے؟اگر اتنا باریک لباس ہو جس سے جسم کی رنگت ظاہر ہو تو نماز کا کیا حکم ہے؟

سوال: سترِعورت سے کیا مراد ہے؟❣
جواب: سترِعورت: یعنی جسم کا وہ حصہ جس کا چھپانا فرض ہے۔👉🏻
▪️مرد کے لیے ناف کے نیچے سے لیکر گھٹنے سمیت بدن کا سارا حصہ چھپانا فرض ہے۔
▪️اور عورت کے لیے منہ کی ٹکلی ، دونوں ہتھیلیوں اور پاؤں کے تلوؤں کے سوا سارا بدن چھپانا فرض ہے۔ اور جوان عورت کو غیر مردوں کے سامنے منہ کھولنا بھی منع ہے۔(از نماز کے احکام)📚

سوال: اگر اتنا باریک لباس ہو جس سے اعضاءِ مستورہ کی رنگت ظاہر ہو تو نماز کا کیا حکم ہے؟💛
جواب:۞ ایسا لباس پہننے سے نماز نہ ہو گی، کیونکہ اعضاء کا ستر (چھپانے) والی شرط نہ پائی گئ۔

سوال: اگر لباس موٹا لیکن چُست(سکن ٹائٹ ،پینٹ) پہننے کی وجہ سے اعضاء کی ہیئت ظاہر ہو تو نماز کا کیا حکم ہو گا؟❤️
جواب:۞ ایسا لباس پہننے سے نماز تو ہو جائے گی ،لیکن اس کی طرف دوسروں کو نظر کرنا جائز نہیں ،لہزا بہتر ہے کہ ایسا لباس نہ پہنیں۔(نماز کے احکام)

سوال: کیا سر کے لٹکے ہوئے بال ،گردن اور کلائیاں بھی سترِ عورت میں شامل ہیں؟❤️
جواب: جی ہاں! سر کے لٹکے ہوئے بال ، گردن ،کلائیاں اور کان بھی عورت (پردہ) ہیں ان کا چُھپانا بھی فرض ہے۔(درِ مختار)🟨

☚اتنا باریک دوبٹہ جس سے بالوں کی سیاہی چمکے اگر عورت نے اوڑھ کر نماز پڑھی تو نماز نہ ہو گی ، جب تک کوئی ایسی چیز نہ اوڑھے جس سے بال وغیرہ کا رنگ چُھپ جائے۔ (عالمگیری)📖🌸

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!