Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

نکاح کو نکاح کہنے کی وجہ

نکاح کو نکاح کہنے کی وجہ

مفسر شہیر ، حکیمُ الاُمَّت مفتی احمد یار خان نعیمی رَحْمَۃُ اللّٰہ ِتَعَالٰی عَلَیْہ نکاح کا معنی اور نکاح کو نکاح کہنے کی وجہ بیان کرتے ہوئے ارشاد فرماتے ہیں : نکاح کا مطلب ضَم ہونا یعنی مِلناہے ، چونکہ نکاح کی وجہ سے دو شخص یعنی خاوندوبیوی دائمی مِل کر زندگی گُزارتے ہیں بلکہ نکاح سے عورت و مرد کے خاندان بلکہ نکاح سے کبھی دو مُلک  مِل جاتے ہیں اِس لیے اِسے نکاح کہتے ہیں ۔ اِصْطِلاحِ شریعت میں یہ لفظ صحبت و عَقْد دونوں پر بولا جاتا ہے۔ (1)
صَلُّوْا عَلَی الْحَبِیْب!
صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلٰی مُحَمَّد
error: Content is protected !!