Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

کھڑے ہو کر کھانے کا رَواج

کھڑے ہو کر کھانے کا رَواج

شادی بیاہ میں ٹیبل کے سامنے کھڑے ہوکر کھانے  اور بوفے سِسٹم کا رَواج بھی ہے اگرچہ گزشتہ کچھ سالوں کی بہ نسبت شادی میں کھڑے ہوکر کھانے میں کافی حد تک کمی آچکی ہے مگر چونکہ بوفے سِسٹم کا رَواج عام ہے اس لئے اب بھی بعض لوگ بوفے کے کنارے کھڑے ہوکر کھاتے دکھائی دیتے ہیں ، حالانکہ کھڑے ہوکر کھانا پینا خلافِ سنت ہے ، حدیثِ پاک میں اس سے منع کیا گیا ہے۔ چنانچہ حضرت سَیِّدُنا انس رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ سے رِوایت ہے کہ رسولُ الله صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ واٰلِہٖ وَسَلَّمَ نے اِس بات سے منع فرمایا کہ آدمی کھڑے ہوکر پانی پئے۔ حضرت سَیِّدُنا قتادہ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ کہتے ہیں : ہم نے پوچھا : کہ  کھڑے ہوکر کھانے کا کیا حکم ہے؟ تو حضرت سَیِّدُنا انس رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ نے فرمایا : یہ کھڑے ہو کر پینے سے بھی زیادہ بُرا ہے۔ (2)لہٰذا شادی بیاہ کے علاوہ عام   حالات میں بھی کھڑے ہوکر کھانے پینے سے گُریز کرنا چاہئے۔ 
2 –   مسلم ، کتاب الاشربة ،  باب کراھـیة الشرب قائما ، ص۸۶۲ ، حـدیث : ۵۲۷۵
error: Content is protected !!