Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

(۱۵) روزہ

رمضان المبارک کا روزہ   ۲ھ؁ میں فرض ہوا ۔روزہ رکھنے پر بھی اللہ و رسول عزوجل وصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم نے جنت کی بشارت دی ہے۔ روزہ کے فضائل میں چند حدیثیں حسب ذیل ہیں:
حدیث:۱
    عَنْ سَھْلٍ عَنِ النَّبِیِّ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ قَالَ اِنَّ فِی الْجَنَّۃِ بَابًا یُقَالُ لَہُ الرَّیَّانُ یَدْخُلُ مِنْہُ الصَّائِمُوْنَ یَوْمَ الْقِیٰمَۃِ لَا یَدْخُلُ مِنْہُ اَحَدٌ غَیْرُھُمْ یُقَالُ اَیْنَ الصَّائِمُوْنَ فَیَقُوْمُوْنَ لَا یَدْخُلُ مِنْہُ اَحَدٌ غَیْرُھُمْ فَاِذَا دَخَلُوْا اُغْلِقَ فَلَمْ یَدْخُلْ مِنْہُ اَحَدٌ(1)
                      (بخاری،ج۱،ص۲۵۴)
    حضرت سہل رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے حضورنبی کریم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم سے روایت کی ہے کہ آپ نے فرمایاکہ جنت میں ایک دروازہ ہے جس کو”باب الریان”(سیرابی کادروازہ )کہا جاتا ہے اسی دروازہ سے قیامت کے دن روزہ دار جنت میں داخل ہوں گے روزہ داروں کے سوا کوئی بھی اس دروازہ سے جنت میں داخل نہیں ہوگا۔جب یہ لوگ داخل ہوچکیں گے تویہ دروازہ بندکردیاجائے گاپھراس کے بعدکوئی بھی اس دروازے سے داخل نہیں ہوگا۔
حدیث:۲
    عَنْ اَبِیْ ھُرَیْرَۃَ اَنَّ رَسُوْلَ اللہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ قَالَ اَلصِّیَامُ جُنَّۃٌ
فَلَا یَرْفُثْ وَلَا یَجْھَلْ فَاِنِ امْرَؤٌ قَاتَلَہٗ اَوْشَاتَمَہٗ فَلْیَقُلْ اِنِّیْ صَائِمٌ مَرَّتَیْنِ وَالَّذِیْ نَفْسِیْ بِیَدِہٖ لَخُلُوْفُ فَمِ الصَّائِمِ اَطْیَبُ عِنْدَ اللہِ مِنْ رِیْحِ الْمِسْکِ یَتْرُکُ طَعَامَہٗ وَشَرَابَہٗ وَشَھْوَتَہٗ مِنْ اَجْلِیْ اَلصِّیَامُ لِیْ وَاَنَا اَجْزِیْ بِہٖ وَالْحَسَنَۃُ بِعَشَرِ اَمْثَالِہَا(1)
                      (بخاری،ج۱،ص۲۵۴)
    حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ عزوجل و صلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم نے فرمایاہے کہ روزہ ڈھال ہے لہٰذاکوئی روزہ دارنہ فحش کلامی کرے نہ جہالت کی بات کرے اور اگر کوئی اس سے لڑے یا گالی گلوچ کرے توروزہ دار کو چاہیے کہ اس سے یہ کہدے کہ ”میں روزہ دارہوں۔”اوراس ذات کی قسم ہے جس کے قبضہ قدرت میں میری جان ہے کہ یقینا روزہ دار کے منہ کی بو اللہ عزوجل کے نزدیک مشک کی خوشبو سے زیادہ اچھی ہے، روزہ دار اپنے کھانے پینے اور اپنی خواہش کو میری و جہ سے چھوڑ دیتا ہے روزہ میرے لیے ہے اورمیں ہی اس کابدلہ دوں گااورہرنیکی کادس گناثواب ہے۔
حدیث:۳
    عَنْ اَبِیْ ھُرَیْرَۃَ عَنِ النَّبِیِّ قَالَ مَنْ صَامَ رَمَضَانَ اِیْمَانًا وَّاِحْتِسَابًا غُفِرَ لَہٗ مَا تَقَدَّمَ مِنْ ذَنْبِہٖ(2)
 (بخاری،ج۱،ص۲۵۵)


(adsbygoogle = window.adsbygoogle || []).push({});

    حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ جو رمضان کا روزہ ایمان رکھتے ہوئے اور ثواب طلب کرنے کی نیت سے رکھے اس کے پہلے گناہ (صغائر)بخش دیئے جاتے ہیں۔
حدیث:۴
    عَنْ سَہْلِ بْنِ سَعْدٍ مَنْ صَامَ یَوْمًا تَطَوُّعًا لَمْ یُطَّلِعْ اَحَدٌ لَمْ یَرْضِ اللہُ تَبَارَکَ وَتَعَالٰی لَہٗ بِثَوَابٍ دُوْنَ الْجَنَّۃِ (1)  (کنزالعمال،ج۸،ص۲۸۹)
    حضرت سہل بن سعدرضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مروی ہے کہ جوایک دن نفلی روزہ اس طرح رکھے کہ کوئی اس پرمطلع نہ ہوتواللہ تعالیٰ اس کوجنت سے کم کوئی ثواب دینے پرراضی ہی نہیں ہوگا۔
حدیث:۵
    عَنْ اَبِیْ ھُرَیْرَۃَ رَضِیَ اللہُ تَعَالٰی عَنْہُ قَالَ قَالَ رَسُوْلُ اللہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ اَتَاکُمْ رَمَضَانُ شَہْرٌ مُّبَارَکٌ فَرَضَ اللہُ عَلَیْکُمْ صِیَامَہٗ تُفْتَحُ فِیْہِ اَبْوَابُ السَّمَاءِ وَتُغْلَقُ فِیْہِ اَبْوَابُ الْجَحِیْمِ وَتُغَلُّ فِیْہِ مَرَدَۃُ الشَّیَاطِیْنِ لِلّٰہِ فِیْہِ لَیْلَۃٌ خَیْرٌ مِّنْ اَلْفِ شَھْرٍ مَنْ حُرِمَ خَیْرَھَا فَقَدْ حُرِمَ۔ رواہ احمد والنسائی(2)
                     (مشکوٰۃ،ج۱،ص۱۷۳)
    حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے مروی ہے، انہوں نے کہا کہ رسول اللہ عزوجل وصلی اللہ تعالیٰ علیہ واٰلہ وسلم نے فرمایاکہ آگیاتمہارے پاس رمضان جوبرکت والامہینہ ہے۔ اللہ عزوجل نے تم لوگوں پر اس کا روزہ فرض کیا ہے اس میں آسمان کے دروازے کھول دیئے جاتے ہیں اورجہنم کے دروازے بندکردیئے جاتے ہیں اوراس میں سرکش شیطانوں کو جکڑ دیا جاتا ہے اور اللہ عزوجل کے لیے اس مہینہ میں ایک رات ایسی ہے جو  ایک ہزارمہینوں سے بہترہے جواس رات کی بھلائیوں سے محروم رہاوہ یقینامحروم ہی رہا۔ اس حدیث کو امام احمد اور نسائی نے روایت کیا ہے۔
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
1۔۔۔۔۔۔صحیح البخاری،کتاب الصوم،باب الرّیان للصائمین،الحدیث۱۸۹۶،ج۱، ص۶۲۵
1۔۔۔۔۔۔صحیح البخاری،کتاب الصوم،باب فضل الصوم،الحدیث:۱۸۹۴،ج۱، ص۶۲۴
2۔۔۔۔۔۔صحیح البخاری،کتاب الصوم،باب من صام رمضان…الخ،الحدیث:۱۹۰۱،ج۱، ص۶۲۶
1۔۔۔۔۔۔کنزالعمال،کتاب الصوم،الباب الاول،الحدیث:۲۳۵۹۶،ج۴،الجزئ۸، ص۲۱۰    
2۔۔۔۔۔۔مشکاۃ المصابیح،کتاب الصوم،الفصل الثالث،الحدیث۱۹۶۲،ج۱،ص۳۷۲
error: Content is protected !!