Our website is made possible by displaying online advertisements to our visitors. Please consider supporting us by whitelisting our website.

اذان کا طریقہ

مسجد سے خارج حصہ میں کسی اونچی جگہ پر قبلہ کی طرف منہ کر کے کھڑا ہو۔ اور کانوں کے سوراخوں میں کلمہ کی انگلیاں ڈال کر بلند آواز سے اَللہُ اَکْبَرُ اَللہُ اَکْبَرُ کہے پھر ذرا ٹھہر کر اَللہُ اَکْبَرُ اَللہُ اَکْبَرُ کہے۔ پھر ذراٹھہر کر دومرتبہ اَشْھَدُ اَنْ لَّا اِلٰہَ اِلَّا اَللہُ کہے پھر دو مرتبہ ٹھہر ٹھہر کر اَشْھَدُ اَنَّ مُحَمَّدًا رَّسُوْلُ اﷲ ؕ کہے پھر داہنی طرف منہ پھیر کر دو مرتبہ حَیَّ عَلَی الصَّلوٰۃِؕ کہے پھر بائیں طرف منہ کر کے دو مرتبہ حَیَّ عَلَی الْفَلَا حِ ؕ کہے۔ پھر قبلہ کی طرف کو منہ کرے اور اﷲاکبر اﷲاکبر کہے پھر ایک مرتبہ لَآ اِلٰہَ اِلَّا اللہُ کہے۔
(الفتاوی الھندیۃ ، کتاب الصلاۃ،الباب الثانی، الفصل الثانی فی کلمات الاذان والاقامۃ وکیفیتھا،ج۱،ص۵۵۔۵۶)
مسئلہ:۔فجر کی اذان میں حَیَّ عَلَی الْفَلَا حِ کہنے کے بعد دو مرتبہ الصَّلوٰۃُ خَیْرٌ مِّنَ النَّوْمِ بھی کہنا مستحب ہے۔
(الفتاوی الھندیۃ ، کتاب الصلاۃ،الباب الثانی، الفصل الثانی فی کلمات الاذان والاقامۃ وکیفیتھا،ج۱،ص۵۵)
    اذان کے بعد پہلے درود شریف پڑھے۔ پھر اذان پڑھنے والا اور اذان سننے والے سب دعا پڑھیں۔
اَللّٰھُمَّ رَبَّ ھٰذِہِ الدَّعْوَۃِ التَّا مَّۃِ وَ الصَّلوٰۃِ الْقَآئِمَۃِ اٰتِ سَیِّدَنَا مُحَمَّدَ نِ الْوَسِیْلَۃَ وَالْفَضِیْلَۃَ وَالدَّرَجَۃَ الرَّفِیْعَۃَ وَابْعَثْہُ مَقَاماً مَّحْمُوْدَانِ الَّذِیْ وَعَدْتَّہٗ وَارْزُقْنَا شَفَا عَتَہٗ یَوْمَ الْقِیٰمَۃِ اِنَّکَ لاَ تُخْلِفُ الْمِیْعَادَ O
(السنن الکبری للبیہقی، کتاب الصلاۃ، باب مایقول اذا فرغ من ذالک،رقم۱۹۳۳،ج۱،ص۶۰۳)
error: Content is protected !!