طواف نفل

جب تک مکہ مکرمہ میں رہے طواف نفل بکثرت ادا کرتا رہے طواف نفل کے لیے کوئی وقت خاص نہیں۔ حتیّٰ کہ ہمارے نزدیک نماز کے کراہت کے وقت بھی طواف نفل ادا کرنا بلاکراہت جائز ہے۔ آفاقی یعنی مسافر کے لیے نفل نماز سے نفل طواف افضل ہے۔ اور اہل مکہ کے لیے طواف سے نماز افضل ہے، مکہ والوں کے لیے یہ حکم فقط موسم حج کے لیے ہے تاکہ آفاقیوں کے لیے جگہ تنگ نہ ہو ورنہ بہرحال نفل طواف بہتر ہے۔ حضور اکرمﷺ نے فرمایا کہ:
’’بیت اللہ کا طواف بھی مثل نماز ہے‘‘۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

error: Content is protected !!